ARTICLES

Imagine yourself in a thriving and satisfying
career,doing what you love and helping
others to advance personality and
professionally.

11 NOV

انسانوں سے بھیک، اللہ سے فضل ملتا ہے

انسانوں سے بھیک، اللہ سے فضل ملتا ہے
حضرت بابا بلھے شاہؒ فرماتے ہیں کہ اگر کسی کو پوجا کے لائق سمجھنا ہے تو اللہ تعالیٰ کی ذات کو سمجھو۔ اگر تم کسی اور کو اس کی جگہ پر رکھو گے تو دنیا سے ملے گا تو ضرور، لیکن بھیک کی صورت میں ملے گا۔ جبکہ اللہ تعالیٰ کی ذات سے بھیک نہیں ملتی بلکہ اس کا فضل ملتا ہے۔ اور وہ فضل اپنی شان کے مطابق عطا کرتا ہے۔ بھیک مانگنے اور چھوٹے چھوٹے دروازوں پر دستک دینے سے بدرجہا بہتر ہے کہ تم اللہ سے مانگو۔ جس ذات کیلئے تگ دَو کی جاسکتی ہے، جس کیلئے خود کو مارا جاسکتا ہے، جس کیلئے اپنی خواہشوں کا گلا گھونٹا جاسکتا ہے، وہ صرف اور صرف اللہ تعالیٰ کی ذات ہے۔
ہم اپنی زندگی میں اردگردکے لوگوں کیلئے اپنی خواہشوں کا گلا گھونٹتے ہیں۔ مثال کے طور پر، باپ اپنا پیٹ اور اپنی خوا ہشیں کاٹ کر بچوں کو پالتا ہے۔ پتا لگا کہ بچے ایسی مخلوق ہیں جس کیلئے انسان خود کو دائو پر لگا دیتا ہے۔ انسان اپنے اقتدار کیلئے اپنے خاندان کو تباہ کرکے رکھ دیتا ہے۔ ایسوں کے نزدیک اقتدار کیلئے خاندان کو تباہ کیا جاسکتا ہے۔ بعض لوگوں کیلئے پیسہ اتنی بڑی ترجیح ہوتا ہے کہ وہ اپنی جان کو خطرے میں ڈال کر پیسہ کما تے ہیں۔ بعض لوگ شہرت پانے کیلئے وہ وہ حرکتیں کرتے ہیں کہ شاید ہم سوچنا بھی گوارا نہ کریں۔ یوں انھیں بدنامی کی صورت میں شہر ت مل جاتی ہے۔ اقتدار کی بجائے اگر آپ کا اقتدار دینے والے سے رابطہ ہے تو پھر آ پ بڑے انسان ہیں۔جس نے زندگی میں اپنی ترجیحات طے نہیں کیں، وہ زندوں کی طرح زندگی نہیں گزار رہا بلکہ مُردوں کی طرح گزار رہا ہے۔
اپنے غموں کو خوش آمدید کیجیے
ترجیحات کا بہترین وقت وہ ہوتا ہے کہ جب انسان بے بس ہوتا ہے، کیو نکہ اس وقت انسان سوچتا ہے کہ میں نے اپنی خواہشوں کی خاطر اپنی زندگی برباد کرڈالی۔ اب وقت ہے کہ ان خواہشوں کے بتوں کو توڑ کر اللہ تعالیٰ سے اپنا تعلق بنالیا جائے۔ جس طرح ملکہ سبا کے دربا ر میں جب ہد ہد خط لے کرآیا تو ملکہ سبا نے کہا کہ ہمیں اس بادشاہ کے آگے ہتھیار ڈالنے پڑیں گے، کیونکہ یہ بہت طاقت وَر بادشاہ ہے۔ ملکہ کے درباری کہنے لگے کہ آپ کیوں ڈر رہی ہیں، ہمارے پاس بھی بہت فوج ہے۔ اس نے کہا کہ مجھے اس بات پر ڈر نہیں ہے کہ اس نے خط طاقتور چیز کے ذریعے بھیجا ہے بلکہ جو ہد ہد کے ذریعے خط بھیج سکتا ہے، اس کے پاس کتنی طاقت ہوگی۔ جب بادشاہ علاقہ فتح کرتاہے تو مسند پر بیٹھنے سے پہلے بڑوں کے سر اتارتا ہے، پھر مسند پر بیٹھتا ہے۔ حضرت شیخ عبدالقادرؒ جیلانی فرماتے ہیں، اللہ تعالیٰ کے ہاں بھی دستور ہے کہ وہ جب کسی کے دل پر بیٹھتا ہے تو پھرخواہشوں کے بتوں کے سر اتارنے پڑتے ہیں۔ ہم نے اپنی خواہشوں کے بتوں کو اتنا بڑا کیا ہوتا ہے کہ وہ ذات گرامی ہماری ترجیحات میں پہلے نمبر نہیں آتی۔ ہم اپنی انا کے بت گرنے نہیں دیتے۔ ہم اپنے مقام سے نیچے آکر کام کرنے کو تیار نہیں ہوتے۔
حضرت واصف علی واصفؒ فرماتے ہیں، ’’غم ولی بنانے کا ایمرجنسی کمیشن ہے۔‘‘ جو بندہ غم کو قبول کرلیتاہے، وہ عام انسان نہیں رہتا، ولی بن جاتا ہے۔ قدرت اس کے اندر وسعت پیدا کردیتی ہے۔ جو بندہ شکوئہ غم کرتا ہے، وہ کہیں کا نہیں رہتا۔ لیلیٰ لنگر بانٹ رہی تھی۔ جب مجنوں کی باری آئی تو اس نے مجنوں کا کاسہ توڑ دیا۔ مجنوں بڑا خوش ہوا۔ سب نے کہا، تمہیں لنگر نہیں ملا اور اوپر سے تمہار ا کاسہ بھی توڑ دیا۔ اس نے پوچھا، کیا کسی اور کا کاسہ توڑا ہے؟ انھوں نے کہا، نہیں۔ مجنوں نے کہا، اس نے میرا کاسہ توڑ دیا، اس کا مطلب ہے کہ وہ مجھے کاسے کے ساتھ نہیں دیکھنا چاہتی۔ وہ مجھے کاسے کے بغیر دیکھنا چاہتی ہے۔
آپ کی ذات اور اس کا مقام
ہر شے کا ایک مقام ہے۔ آپ اپنی سواری کو اسی جگہ رکھتے ہیں، جہاں وہ محفوظ رہے۔ کیا آپ نے کبھی ایسی جگہ اپنی گاڑی پارک کی ہے جہاں آپ کو پتا ہو کہ یہاں یہ غیر محفوظ ہے؟ نہیں، کیونکہ آپ کو پتا ہے کہ اس کا مقام کیا ہے۔ ذرا غور کیجیے کہ ہم نے اللہ تعالیٰ کی ذات کو کہاں رکھا ہے۔ جس ذاتِ گرامی سے پہلے، یہاں اور بعد میں بھی واسطہ ہے، کیا اس کی خوشنودی ہماری ترجیحات میں شامل ہے۔ آپ کی زندگی کی معلومات اس کی گواہی دیں گی۔
غم بہت بڑی نعمت ہے، کیوں کہ جس حالت میں غم آتا ہے، اس میں بہت امکان ہوتا ہے کہ آدمی اپنے انتخابات کو بدل ڈالے۔ وہ دنیا کی ترجیحات کو چھوڑ کر خدا کو اپنی اولین ترجیح میں شامل کرلے۔ جب تک غم رہتاہے، اس وقت تک پور انتخاب ہوتا ہے کہ بندہ ٹھیک ہوجائے۔ غم زندگی میں آیا اور ترجیحات بدلنے کا سبب بن گیا تو یہ بڑی نعمت ہے۔

Fiza

?? ??? ?? ?? ??? ???? ?? ?? ???? ???? ?? ?? ??? ??????-?? ??? ???? ?? ??? ?????? ??????? ?????? ? ????? ??? ???? ?? ? ???? ?? ????? ?? ???? ?? ??? ?????? ?? ?????? ??????? ???? ??? ???? ??? ? ??? ??

Xohaib Rajpoot

Great Article Sir

LEAVE A REPLY

YOU MAY ALSO LIKE

بچے کو اسمارٹ کمپیوٹر گیم (ایکس باکس یا پلے اسٹیشن) کھیلنے کیلئے دیجیے۔ اس سے بھی فہم و...
The Key To Success

12 NOV 2021

Who is The Best Man?

12 NOV 2021